انہوں نے کہا کہ پرویز الٰہی کے پاس 186 اراکین نہیں، وہ کسی صورت اعتماد کا ووٹ نہیں لے سکتے، ہمارے پاس 179 اراکین ہیں اور رن آف الیکشن میں ہم کامیاب ہو سکتے ہیں، تحریک انصاف کے اراکین ہمارے ساتھ آنا چاہتے ہیں لیکن سپریم کورٹ کا فیصلہ ان کے آڑے ہے، اب وہ اعتماد کا ووٹ نہ دے کر اپنے غم و غصے کا اظہار کر رہے ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں رانا ثنا اللہ کا کہنا تھا سلیمان شہباز کی جہانگیر ترین سے پہلی ملاقات نہیں ہے، پہلے بھی ایسی ملاقاتیں کرتے رہے ہیں جبکہ حمزہ شہباز اپنی والدہ کی عیادت کے لیے بیرون ملک میں مقیم ہیں، میں پنجاب حکومت واپس لے کر ہی واپس اسلام آباد جاؤں گا۔